امریکہ مشرق وسطی میں حکمت عملی تعاون کے قیام کی کوششوں میں

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ، علاقے  کے سنگین خطرات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے توانائی و اقتصادی تعاون    میں معاونت کے لیے "مشرق وسطی حکمت عملی  میثاق" قائم کرنے میں سر گرم عمل

امریکہ مشرق وسطی میں حکمت عملی تعاون کے قیام کی کوششوں میں

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو  کا کہنا ہے کہ امریکہ مشرق وسطی میں مصر، اُردن اور خلیجی تعاون کونسل کے ممالک کو یکجا کرنے والے "مشرق وسطی حکمت ِ عملی میثاق" قائم کرنے کی کوشش میں ہے۔

مصری دارالحکومت قاہرہ میں امریکن یونیورسٹی میں خطاب دینے والے پومپیو نے کہا کہ "ہم مستقبل کی مشترکہ خوشحالی کے  لیے شراکت داری قائم کررہے ہیں، خطے کے کہیں زیادہ بہتر سطح   تک پہنچنے کے لیے پرانی کشمکش کو ختم کرنے کا وقت آ گیا ہے۔ "

انہوں نے بتایا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ، علاقے  کے سنگین خطرات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے توانائی و اقتصادی تعاون    میں معاونت کے لیے "مشرق وسطی حکمت عملی  میثاق" قائم کرنے  کے درپے ہے۔  یہ جدوجہد خلیجی تعاون کونسل کے ارکان مصر اور اُردن کو یکجا کرے گی۔ اب ہم ان ممالک سے  خطے میں ایک پختہ اتحاد قائم کرنے کی خاطر آئندہ کے اقدام اٹھانے کے خواہاں  ہیں۔  پومپیو نے  اسرائیلی وزیر اعظم بنیا مین نتن  یاہو  کے خلیجی ملک عمان کا سرکاری دورہ کرنے کی یاد دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ماضیِ  قریب  تک ذہن و گمان میں بھی نہ ہونے   والے نئے تعلقات کی داغ بیل  ڈالی گئی ہے۔

پومپیو نے بتایا کہ ہم اسرائیل کی فوجوں  سے تعاون کو جاری رکھیں گے۔

توقع ہے کہ پومپیو اُردن، عراق اور مصر کے بعد سعودی عرب ، قطر، متحدہ عرب امارات، بحرین ، عمان اور کویت کے بھی دورے کریں گے۔



متعللقہ خبریں