صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان نے شمالی یورپ کو حیرت زدہ کر دیا

جب میں فن لینڈ کے صدر سے ملا تو انہوں نے مجھے کہا کہ جنگلاتی ملک ہونے کی وجہ سے وہ جنگل کی صفائی کا کام سہاگے  سے کرتے ہیں: صدر ٹرمپ، مجھے نہیں یاد پڑتا کہ ٹرمپ کے ساتھ ملاقات میں میں نے ایسی کوئی بات کی ہو: ساولی نینیستو

صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان نے شمالی یورپ کو حیرت زدہ کر دیا

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فن لینڈ کے بارے میں بیان  نے شمالی یورپ کو حیرت زدہ کر دیا ہے۔

بی بی سی کی خبر کے مطابق صدر ٹرمپ نے ہفتے کے آخر میں جنگل کی آگ کی لپیٹ میں آئی ریاست کیلیفورنیا کا دورہ کیا اور یہاں جاری کردہ بیان میں کہا  ہے کہ یہ آگ ملکی تاریخ کی سب سے زیادہ تباہ کن آگ ہے جو ناکافی جنگلات کاری کی وجہ سے لگی ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب ہم دیگر ممالک پر نگاہ ڈالتے ہیں تو ہمیں علم ہوتا ہے کہ وہ  جنگلات کی صفائی کا کام بہت مختلف شکل میں کرتے ہیں۔ جب میں فن لینڈ کے صدر سے ملا تو انہوں نے مجھے کہا کہ جنگلاتی ملک ہونے کی وجہ سے وہ جنگل کی صفائی کا کام سہاگے  سے کرتے ہیں۔ سہاگے کی مدد سے صفائی میں ان کا بہت وقت لگتا ہے تاہم کوئی مسئلہ پیش نہیں آتا۔

تاہم فن لینڈ کے صدر' ساولی نینیستو'  نے  روزنامہ 'التا سانومات' کے لئے اپنے انٹرویو میں کہا ہے کہ مجھے نہیں یاد پڑتا کہ ٹرمپ کے ساتھ ملاقات میں میں نے ایسی کوئی بات کی ہو۔

نینیستو نے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ کے ساتھ ملاقات میں میں نے ان سے کہا تھا کہ فن لینڈ جنگلات سے بھرا ہوا ہے اور یہ کہ وہ ایک اچھے نگرانی سسٹم اور نیٹ ورک کے مالک ہیں۔

ٹرمپ کے بیان پر فن لینڈ کے شہریوں  کی طرف سے حیرت کا اظہار کیا گیا ہے اور بیان سوشل میڈیا پر تمسخر بن گیا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ کی ریاست کیلیفورنیا کے شمال میں تقریباً 570 کلو میٹر  پر پھیلی ہوئی  جنگل کی آگ کی وجہ سے 76 افراد ہلاک  ہو گئے ہیں اور 11 ہزار سے زیادہ عمارتیں جل کر راکھ ہو چکی ہیں۔

حکام کے مطابق ریاست میں ایک ہزار 300 افراد لاپتہ ہیں۔



متعللقہ خبریں