سعودی عرب اور بھارت اسلحہ کے سب سے بڑے خریدار

ہتھیاروں اور اسلحہ کی برآمدات میں امریکہ کے  بعد روس، فرانس، جرمنی اور چین کا نمبر آتا ہے

سعودی عرب اور بھارت اسلحہ کے سب سے بڑے خریدار

مشرق وسطی کے علاقے کو اسلحہ کی فروخت میں دو گنا اضافہ ہو ا ہے۔

اسٹاک ہوم بین الاقوامی  امن تحقیقاتی انسٹیٹیوٹ کی رپورٹ کے مطابق  مشرقِ وسطی کے ممالک میں  اسلحہ  کی درآمدات 2013 تا 2017 کے درمیانی عرصے  کے مقابلے میں دو گنا   بڑھ گئی ہے۔

عالمی اسلحہ کی تجارت  کو موضوع بنانے والی  اس رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ  متحدہ  امریکہ  ہتھیاروں  کی برآمدات میں اپنی لیڈرشپ کو برقرار رکھے ہوئے ہے۔

امریکہ اور جرمنی کے بھی شامل ہونے والے یورپی ممالک  مشرق وسطی کے ملکوں کو اسلحہ فروخت کرنے میں پیش پیش ہے۔

جبکہ خطے میں اسلحہ کا سب سے بڑا خریدار سعودی عرب ہے، امریکہ اور یورپی ملکوں نے حالیہ 5 برسوں   میں اس ملک کی مانگ کے 98 فیصد کو پورا کیا ہے۔

رپورٹ  کے مطابق عالمی اسلحہ کے ایک بٹا تین کو امریکہ نے  فروخت کیا  ہے  اور اس ملک کی گزشتہ 5 سالوں میں  اسلحہ کی برآمدات  اس سے قبل کے 5 سالہ دور کے مقابلے میں 25 فیصد تک بڑھ گئی ہیں۔

ہتھیاروں اور اسلحہ کی برآمدات میں امریکہ کے  بعد روس، فرانس، جرمنی اور چین کا نمبر آتا ہے۔

یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ  بھاری مقدار میں اسلحہ خریدنے والے بھارت نے  دنیا بھر میں فروخت ہونے والے اسلحہ کا12 فیصد خریدا ہے۔



متعللقہ خبریں