امریکہ کی دہشت گرد تنظیم کو فراہم کی گئی مدد دستاویزی شکل اختیار کر گئی

پینٹاگون کی رپورٹ: امریکہ، شام میں دہشت گرد تنظیم YPG/PKK کے دہشتگردوں کو تربیت دینے اور دہشت گردی کے خلاف جدوجہد  کی فورسز کی تشکیل نو کا پروگرام رکھتا ہے

امریکہ کی دہشت گرد تنظیم کو فراہم کی گئی مدد دستاویزی شکل اختیار کر گئی

امریکہ کی وزارت دفاع پینٹاگون کے تفتیشی دفتر کی رپورٹ میں دہشت گرد تنظیم کو فراہم کی گئی مدد دستاویزی شکل اختیار کر گئی ہے۔

رپورٹ کے مندرجات سے ثابت ہوتا ہے کہ امریکہ ، شامی ڈیموکریٹک فورسز کا نام استعمال کرنے والے دہشت گرد تنظیم YPG/PKK کے دہشتگردوں کو شام میں داخلی سلامتی فورسز ، سرحدی سلامتی فورسز اور دھماکے کے ماہرین کی حیثیت سے تربیت دینے کا آغاز  کرنے اور دہشت گردی کے خلاف جدوجہد  کی فورسز کی تشکیل نو کا پروگرام رکھتا ہے۔

اکتوبر۔دسمبر  کے مہینوں  سے متعلق تفتیشی دفتر کی رپورٹ  میں کہا گیا ہے کہ امریکہ نے شام میں فوجیوں کی تعداد کو چار گنا بڑھا  کر 2 ہزار کر دیا ہے ، امریکہ نے شام میں کُل 12 ہزار 500 کے قریب فوجیوں کو تربیت دی  اور  ان میں سے 11 ہزار سے زائد حصہ YPG/PYD/PKK  کے دہشت گردوں سے بنائی گئی شامی ڈیموکریٹک فورسز پر مشتمل ہے۔

رپورٹ میں پینٹاگون کے ان الفاظ کو جگہ دی گئی ہے کہ امریکی فوج نے شامی ڈیموکریٹک فورسز کو اسلحے اور فوجی سازوسامان سے لیس کیا ہے لیکن خاص طور پر YPG کے اس اسلحے کو درست مقصد کے لئے استعمال کرنے کے بارے میں پُر یقین ہونے کے لئے YPG کو فراہم کئے گئے ساز و سامان پر نگاہ رکھی گئی ہے۔

داعش سے حاصل کئے گئے علاقوں میں سلامتی و استحکام کو یقینی بنانے کے لئے پینٹاگون کے شامی ڈیموکریٹک فورسز کو تربیت دینے  کا ذکر کرتے ہوئے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شامی ڈیموکریٹک فورسز کی داخلی سلامتی  فورسز، سرحدی سلامتی فورسز اور دھماکے کے ماہرین نے تربیت کا آغاز کر دیا ہے اور دہشت گردی کے خلاف جدوجہد  کی فورسز کی تشکیل نو  کے لئے پروگرام بنائے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ  شامی ڈیموکریٹک فورسز کے نام سے PYD/PKK نے، 3 ہزار سے زائد افراد پر مشتمل نام نہاد راقہ داخلی سلامتی فورسز کو تربیت دی  ہے۔



متعللقہ خبریں