القدس کے بارے میں امریکی فیصلہ،سلامتی کونسل کا اجلاس طلب ہوگا

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کے بعد سلامتی کونسل کل اس حوالے سے ایک  اجلاس طلب کر رہی ہے

القدس کے بارے میں امریکی فیصلہ،سلامتی کونسل کا اجلاس طلب ہوگا

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کے بعد بین الاقوامی سطح پر اس کی مذمت کا سلسلہ جاری ہے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر نے گزشتہ روز وائٹ ہاؤس میں خطاب کرتے ہوئے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ان کے خیال میں یہ اقدام امریکہ کے بہترین مفاد اور اسرائیل اور فلسطین کے درمیان قیامِ امن کے لیے ضروری تھا۔

 بعض ممالک کی درخواست  سلامتی کونسل کل اس حوالے سے ایک  اجلاس طلب کر رہی ہے ۔

اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے  القدس پر اسرائیلی حاکمیت کے حوالے سے صدر ٹرمپ کے اقدام کو سختی سے مسترد کر دیا۔

انہوں  نے اپنے بیان میں صدر ٹرمپ کے فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ القدس کے تنازعے کو ہر صورت اسرائیل اور فلسطینیوں کے ساتھ براہ راست مذاکرات کے ذریعے حل کیا جانا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کی حیثیت سے میں روز اوّل سے کسی بھی ایسے یکطرفہ حل کے خلاف بات کرتا رہا ہوں جس سے اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان امن کے امکانات کو  نقصان  پہنچ سکتا ہے۔

 دوسری جانب ،یورپی یونین کے خارجہ تعلقات کی سربراہ فیدریکا موگیرینی نے صدر ٹرمپ کے اقدام پرشدید تشویش کا اظہار کیا ہے.

 موگیرینی نے کہا  کہ یروشلم کے بارے فریقین کی خواہشات کو پورا کیا جانا نہایت ضروری ہے اور مسئلے کو حل کرنے کے لیے ہر صورت مذاکرات کا راستہ ڈھونڈنا چاہیے۔

 

 



متعللقہ خبریں