روس: امریکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ نہیں کر رہا جنگ کا جھانسا دے رہا ہے

حالیہ پیش رفتوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ امریکہ مشرق وسطیٰ میں دہشت گردی کے خلاف حقیقت میں  جنگ کرنے کی بجائے جنگ کرنے کا تائثر پیش کر رہا ہے: روسی وزارت دفاع

روس: امریکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ نہیں کر رہا جنگ کا جھانسا دے رہا ہے

روس نے کہا ہے کہ امریکہ، شام میں، دہشت گرد تنظیم داعش کی کاروائیوں کی عملی پردہ پوشی کر رہی ہے۔

روس کی وزارت دفاع کی طرف سے جاری کردہ بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ شام  میں دہشت گرد تنظیم داعش کے آخری قلعے  ابو کمال  قصبے میں  داعش کے خلاف  روس کےفضائی حملوں  کو امریکہ کی طرف سے  روکنے کی کوشش کی گئی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حالیہ پیش رفتوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ امریکہ مشرق وسطیٰ میں دہشت گردی کے خلاف حقیقت میں  جنگ کرنے کی بجائے جنگ کرنے کا تائثر پیش کر رہا ہے۔

واضح رہے کہ بی بی سی کی خصوصی تحقیق کے مطابق داعش کے 250 دہشت گردوں اور ان کے کنبوں کو، امریکی حمایت کی حامل علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیموں  PKK/PYD/YPG   کے مشترکہ آپریشن کے ساتھ راقہ سے بحفاظت نکال لیا گیا تھا۔

شام میں روسی یونٹوں کے کمانڈر بریگیڈئر جنرل سرگے سرویکین نے بھی کہا تھا کہ دہشت گرد تنظیم PKK/PYD  نے داعش  کے بغیر کسی جھڑپ کے علاقے سے پس قدمی کرنے کے لئے دہشت گرد تنظیم  کے لیڈروں کے ساتھ سمجھوتہ کر لیا تھا لیکن دنیا کو فریب دینے کے لئے شدید جھڑپیں ہونے سے متعلق خبریں شائع کی گئی تھیں۔



متعللقہ خبریں