صدر ٹرمپ  کا قطر پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام اور  کڑی نکتہ چینی

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ دہشت گردوں کی ضروریات پوری کرنے والے ممالک کو اپنی پالیسی بدلنا ہو گی۔

صدر ٹرمپ  کا قطر پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام اور  کڑی نکتہ چینی

 

 علاقے کے کئی ممالک اپنی سرزمین پر امریکی فوجی اڈوں کے قیام کیلئے تیار ہیں۔ دہشت گردوں کی ضروریات پوری کرنے والے ممالک کو اپنی پالیسی بدلنا ہو گی۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی ٹیلی ویژن ‘‘سی بی این ’’ کو انٹرویو دیتے ہوئے ایک بار پھر قطر پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام عائد کر کے اس پر کڑی نکتہ چینی کی ہے ۔ انھوں نے کہا کہ قطر میں امریکی فوجی اڈے کی موجودگی امریکا کی مجبوری نہیں ہے ، خطے کے کئی دوسرے ممالک اپنی سرزمین پر امریکی فوجی اڈوں کے قیام کے لیے تیار ہیں۔ صدر ٹرمپ نے کہا کہ قطر دہشت گردوں کے مالی معاون کے طور پر مشہور ہے ۔ اب وقت آگیا ہے کہ دوحہ دہشت گردی کی حمایت اور اس کی مالی اعانت فوری طور پر روک دے ۔دہشت گردوں کی ضروریات پوری کرنے والے ممالک کو اپنی پالیسی بدلنا ہو  گی ۔دہشت گردی وحشت ہے اور اس کی مالی اعانت کا قطعی کوئی جواز نہیں ہے ۔قطر کے معاملے میں امریکی انتظامیہ میں پائے جانے والے اختلافات سے متعلق صدر ٹرمپ نے کہا کہ دوحہ سے متعلق وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن کے ساتھ ان کے اختلافات معمولی نوعیت کے ہیں۔ پالیسی پر عملدرآمد اور طریقہ کار پر معمولی اختلاف ہے جسے جلد ختم کردیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ قطر کے ساتھ امریکا کے اچھے تعلقات قائم ہیں، تاہم انہوں نے کہا کہ اگرامریکا مجبور ہوا تو دوحہ میں فوجی اڈا ختم کیا جا سکتا ہے ، متعدد ممالک اپنے ہاں امریکی فوجی اڈے کے قیام کے لیے تیار ہیں۔



متعللقہ خبریں